Bazar Jouth Ka By Jaun Elia - ہے یہ بازار جھوٹ کا بازار


ہے یہ بازار جھوٹ کا بازار 
hai yeh bazar jhoot ka bazar
Bazar Jouth Ka By Jaun Elia - ہے یہ بازار جھوٹ کا بازار

پھر یہی جنس کیوں نہ تولیں ہم 
phir yehi jins kyo naa tolien hum

کر کے اک دوسرے سے عہدِ وفا 
kar ka aik dosrey sey ahed e wafa

آؤ کچھ دیر جھوٹ بولیں ہم
ao kuch der jhoot boley hum
Check this out




ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے

Featured Post

Mirza ghalib fikar insaa par tri hasti se