Jaaney Yaha Ho By Jaun Elia - جانے یہاں ہوں میں یا میں


جانے یہاں ہوں میں یا میں 
Jaaney Yaha Ho By Jaun Elia - جانے یہاں ہوں میں یا میں

اپنا گماں ہوں میں یا میں 

میری دوئی ہے میرا زیاں 

اپنا زیاں ہوں میں یا میں 

جانے کون تھا وہ یاوہ 

جانے کہاں ہوں میں یا میں 

ہر دم اپنی زد پر ہوں 

جا ئے اماں ہوں میں یا میں 

میں جو ہوں اک حیرت کا سماں 

کیا وہ سماں ہوں میں یا میں 

کون ہے مجھ میں شعلہ بجاں 

شعلہ بجاں ہوں میں یا میں 

آگ، مرے ہونے کی آگ 

تیرا دھواں ہوں میں یا میں


Check this out
Magar Yeh Zakham Hai Ya - مگر یہ زخم یہ مرہم۔۔۔

jaanay yahan hon mein ya mein


apna guma hon mein ya mein


meri doi hai mera zayan


apna zayan hon mein ya mein


jaanay kon tha woh yawa


jaanay kahan hon mein ya mein


har dam apni zad par hon


ja ye amma hon mein ya mein


mein jo hon ik herat ka samaa


kya woh samaa hon mein ya mein


kon hai mujh mein shola بجاں


shola بجاں hon mein ya mein


aag, maray honay ki aag



tera dhuwan hon mein ya mein

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے

Featured Post

Mirza ghalib fikar insaa par tri hasti se