Majh Mein By Jaun Elia - ہے فصیلیں اُٹھا رہا مجھ میں


ہے فصیلیں اُٹھا رہا مجھ میں 
Majh Mein By Jaun Elia - ہے فصیلیں اُٹھا رہا مجھ میں


جانے یہ کون آ رہا مجھ میں 



جونؔ مجھ کو جلا وطن کر کے 

وہ میرے بِن بھلا رہا مجھ میں 

مجھ سے اس کو رہی تلاش، اُمید 

سو بہت دن چھپا رہا مجھ میں 

تھا قیامت، سکوت کا آشوب 

حشر سا اک بپا رہا مجھ میں 

پسِ پردہ کوئی نہ تھا پھر بھی 

ایک پردہ کھنچا رہا مجھ میں 

مجھ میں آ کے گِرا تھا ایک زخمی 

جانے کب تک پڑا رہا مجھ میں 

اتنا خالی تھا اندروں میرا 

کچھ دنوں تو خدا رہا مجھ میں
Check this out


hai fasilain uttah raha mujh mein

jaany yeh kon aa raha mujh mein


جونؔ mujh ko jala watan kar ke

woh mere bِn bhala raha mujh mein

mujh se is ko rahi talaash, umeed

so bohat din chhupa raha mujh mein

tha qayamat, sukut ka aashob

hashar sa ik bapaa raha mujh mein

pass parda koi nah tha phir bhi

aik parda khincha raha mujh mein

mujh mein aa ke gira tha aik zakhmi

jaany kab tak para raha mujh mein

itna khaali tha andron mera

kuch dinon to kkhuda raha mujh mein

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے

Featured Post

Mirza ghalib fikar insaa par tri hasti se