Teri Khusbu By Jaun Elia - یہ تیرے خط تری خوشبو


یہ تیرے خط تری خوشبو یہ تیرے خواب و خیال 
Teri Khusbu By Jaun Elia - یہ تیرے خط تری خوشبو

متاع جاں ہیں تیرے قول اور قسم کی طرح 

گزشتہ سال انھیں میں نے گن کے رکھا تھا 

کسی غریب کی جوڑی ہوئی رقم کی طرح


Check this out
Magar Yeh Zakham Hai Ya - مگر یہ زخم یہ مرہم۔۔۔

yeh tairay khat tri khushbu yeh tairay khawab o khayaal

Mataa jaan hain tairay qoul aur qisam ki terhan


guzashta saal unhein mein ne gun ke rakha tha



kisi ghareeb ki jori hui raqam ki terhan

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے

Featured Post

Mirza ghalib fikar insaa par tri hasti se