Type Here to Get Search Results !

Search This Blog

Shahar Gham By John Elia - شہر غم


خوش گذران شہر غم ، خوش گذراں گزر گئے 

Shahar Gham By John Elia - شہر غم



زمزمہ خواں گزر گئے ، رقص کناں گزر گئے 




وادی غم کے خوش خرام ، خوش نفسان تلخ جام 




نغمہ زناں ، نوازناں ، نعرہ زناں گزر گئے 




سوختگاں کا ذکر کیا، بس یہ سمجھ کہ وہ گروہ 




صر صر بے اماں کے ساتھ ، دست فشاں گزر گئے 




زہر بہ جام ریختہ، زخم بہ کام بیختہ 




عشرتیان رزق غم ، نوش چکاں گزر گئے 




اس در نیم وا سے ہم حلقہ بہ حلقہ صف بہ صف 




سینہ زناں گزر گئے ، جامہ وراں گزر گئے 




ہم نے خدا کا رد لکھا نفی بہ نفی لا بہ لا! 




ہم ہی خدا گزیدگاں تم پہ گراں گزر گئے 




اس کی وفاکے باوجود اس کو نہ پا کے بد گماں 




کتنے یقیں بچھڑ گئے ، کتنے گماں گزر گئے 




مجمع مہ وشاں سے ہم زخم طلب کے باوجود 




اپنی کلاہ کج کیے ، عشوہ کناں گزر گئے 




خود نگران دل زدہ ، دل زدگان خود نگر! 




کوچہ ءِ التفات سے خود نگراں گزر گئے 




اب یہی طے ہوا کہ ہم تجھ سے قریب تر نہیں 




آج ترے تکلفات دل پہ گراں گزر گئے 




رات تھی میرے سامنے فرد حساب ماہ و سال 




دن ، مری سرخوشی کے دن، جانے کہاں گزر گئے 




کیا وہ بساط الٹ گئی، ہاں وہ بساط الٹ گئی 




کیا وہ جواں گزر گئے ؟ ہاں وہ جواں گزر گئے


Check this out

Magar Yeh Zakham Hai Ya - مگر یہ زخم یہ مرہم۔۔۔


khush guzaran shehar gham, khush guzaran guzar gay



Zamzamah khwan guzar gay, raqs kinaan guzar gay




waadi gham ke khush Khiraam , khush nafsan talkhh jaam






naghma nazaa nawaza naara naza guzar gay





sukhtaga ka zikar kya, bas yeh samajh ke woh giroh






sr sr be amma ke sath, dast fishan guzar gay






zeher bah jaam Reekhtah , zakham bah kaam beaikhta



ashartiyaan rizaq gham, nosh chukan guzar gay




is dar name wa se hum halqa bah halqa saf bah saf






seenah naza guzar gay, jama waran guzar gay






hum ne kkhuda ka radd likha nifi bah nifi laa bah laa !






hum hi kkhuda gaizdgah tum pay giran guzar gay






is ki wafa k bawajood is ko nah pa ke bad guma






kitney yaqeen bhichar gay, kitney guma guzar gay






majmaa Meh wa shaa se hum zakham talabb ke bawajood






apni kullah kaj kiye, ishva kinaan guzar gay






khud nigran dil zada, dil zadgaan khud nagar !






koocha hamza iltifaat se khud nigaran guzar gay






ab yahi tey sun-hwa ke hum tujh se qareeb tar nahi






aaj tre takallufaat dil pay giran guzar gay






raat thi mere samnay fard hisaab mah o saal






din, meri sar khushi ke din, jaaney kahan guzar gay






kya woh bisaat ulat gayi, haan woh bisaat ulat gayi






kya woh jawaa guzar gay? haan woh jawaa guzar gay

Tags

Post a Comment

0 Comments
* Please Don't Spam Here. All the Comments are Reviewed by Admin.