Taana Diya Jaye By John Elia - طعنہ دیا جائے


ہر طنز کیا جائے، ہر اک طعنہ دیا جائے 


Taana Diya Jaye By John Elia -  طعنہ دیا جائے


کچھ بھی ہو پر اب حد ادب میں رہا نہ جائے 



تاریخ نے قوموں کو دیا ہے یہی بیغام 


حق مانگنا توہین ہے حق چھین لیا جائے

Check this out


har tanz kya jaye, har ik tana diya jaye

kuch bhi ho par ab had adab mein raha nah jaye


tareekh ne qomon ko diya hai yahi بیغام


haq maangna tauheen hai haq chean liya jaye

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے

Featured Post

Mirza ghalib fikar insaa par tri hasti se