Tu Mere Pass By John Elia - تو میرے پاس


مرا اِک مشورہ ہے اِلتجا نئیں 


Tu Mere Pass By John Elia - تو میرے پاس



تو میرے پاس سے اس وقت جا نئیں 


کوئی دَم چَین پڑ جاتا مجھے بھی 

مگر میں خُود سے دَم بھر کو جُدا نئیں 

میں خُود سے کچھ بھی کیوں منوا رہا ہوں 

میں یاں اپنی طرف بھیجا ہوا نئیں 

پتا ہے جانے کس کا، نام میرا 

مرا کوئی پتا، میرا پتا نئیں 

سفر درپیش ہے اک بے مسافت 

مسافت ہو تو کوئی فاصلہ نئیں 

ذرا بھی مجھ سے تم غافل نہ رہیو 

میں بے ہوشی میں بھی بے ماجرا نئیں 

دُکھ اُس کے ہجر کا، اب کیا بتاؤں 

کہ جس کا وصل بھی تو بے گلہ نئیں 

ہیں اس قامت سوا بھی کتنے قامت 

پر اِک حالت ہے جو اس کے سوا نئیں 

محبت کچھ نہ تھی جُز بدحواسی 

کہ وہ بندِ قبا، ہم سے کُھلا نئیں 

وہ خُوشبو مجھ سے بچھڑی تھی یہ کہہ کر 

منانا سب کو، پر اب روٹھنا نئیں

Check this out

Magar Yeh Zakham Hai Ya - مگر یہ زخم یہ مرہم۔۔۔


mra ik mahswara hai iltija nyin



to mere paas se is waqt ja nyin





koi Dam chain par jata mujhe bhi



magar mein khud se Dam bhar ko juda nyin



mein khud se kuch bhi kyun Manwa raha hon



mein yaan apni taraf bheja sun-hwa nyin



pata hai jany kis ka, naam mera



mra koi pata, mera pata nyin



safar darpaish hai ik be masafat



masafat ho to koi faasla nyin



zara bhi mujh se tum ghaafil nah rahev



mein be hoshi mein bhi be maajra nyin



dukh uss ke hijar ka, ab kya بتاؤں



ke jis ka wasal bhi to be gilah nyin



hain is qaamat siwa bhi kitney qaamat



par ik haalat hai jo is ke siwa nyin



mohabbat kuch nah thi jُz badhawasi



ke woh bndِ quba, hum se khula nyin



woh khushbu mujh se bichrri thi yeh keh kar



manana sab ko, par ab roothna nyin

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے

Featured Post

Mirza ghalib fikar insaa par tri hasti se