Daagh Seena Shab By Jaun Elia

 Daagh  Seena Shab By Jaun Elia

Jaun Elia

 

داغ سینہ شب 

 

نویدِ عشرتِ فردا کسے مبارک ہو

خیال انجمن آرا کسے مبارک ہے 

یہ داغ سینہِ شب یہ ہلال عید طرب!

دل فسردہ ، بتانا کسے مبارک ہو 

یہ طنز کوش تجلی یہ طعنہ زن جلوہ

کوئی بتائے خدارا کسے مبارک ہو 

سوال یہ ہے کہ اس زخم خوردہ گلشن میں

فسون خندہ بیجا کسے مبارک ہو 

نگار شوق و تمنا ترے تمنائی

ہیں نا امید تمنا کسے مبارک ہو 

بہار رقص و تماشا، ترے تماشائی

تڑپ رہے ہیں تماشا کسے مبارک ہو 

کسی کا شیوہ الطاف کس کو راس آئے

کسی کے عہد کا ایفا کسے مبارک ہو 

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے

Featured Post

Isharo k Saath Hain By Jaun Elia