Type Here to Get Search Results !

Search This Blog

Beautiful Urdu Poetry By Agha Hashar Kashmiri ~ Urdu Shayari of Agha Hashar Kashmri

If you are looking for beautiful Urdu poetry of agha hashar kashmiri the You are on the right place here are some heart teaching Urdu shayari written by agha hashar and ghair ki baato ka akhir atibar a hi gaya is my favorite poetry and I hope you will love this one also 

 غیر کی باتوں کا آخِر اِعتِبار آ ہی گیا

میری جانِب سے تِرے دِل میں غُبار آ ہی گیا

Ghair ki baato ka a akhir atibar a hi gaya

Meri janib sey there Dil mein gubaar a hi gaya


جانتا تھا کھا رہا ہے بے وفا جُھوٹی قسم

سادگی دیکھو کہ پِھر بھی اِعتِبار آ ہی گیا

Janta tha khaa raha hai bewafa jhooti qasam

Sadgi dheko k phir bhi atibar a hi gaya

پُوچھنے والوں سے گو مَیں نے چُھپایا دِل کا راز

پھر بھی تیرا نام لب پر ایک بار آ ہی گیا

Pouchney walo sey goo Maine chupaya Dil ka raaz

Phir bhi tera naam lab per aik bar a hi gaya

تُو نہ آیا او وفا دُشمن تو کیا ہم مر گئے

چند دِن تڑپا کِئے آخِر قرار آ ہی گیا

Tu na aya o WAFA e dusman toh kia hum mar gaye 

Chan din tarpa kiye akhir qarrar a hi gaya

جی میں تھا اے حشرؔ اُس سے اب نہ بولیں گے کبھی

بے وفا جب سامنے آیا تو پیار آ ہی گیا۔۔۔!

Jee main tha a hashar us sey kabhi na boley gai kabhi

Bewafa jab samney aya toh Pyar a hi gaya

 آغا حشرؔ کاشمیری​

یاد میں تیری جہاں کو بھولتا جاتا ہوں میں 

بھولنے والے کبھی تجھ کو بھی یاد آتا ہوں میں 

Yaad mein Teri jaha ko bhoolta Jata ho main

Bhoolney waley kabhi tujh ko bhi yaad ata ho main


ایک دھندلا سا تصور ہے کہ دل بھی تھا یہاں 

اب تو سینے میں فقط اک ٹیس سی پاتا ہوں میں 

Aik dhundla sa tasveer hai k Dil bhi tha yaha

Ab toh seeney mein faqat aik thees si paata ho main

او وفا نا آشنا کب تک سنوں تیرا گلہ 

بے وفا کہتے ہیں تجھ کو اور شرماتا ہوں میں 

Oo wafa na ashna kab Tak Suno tera gilla

Bewafa kahtey hai tujh ko aur sharmata ho main

آرزوؤں کا شباب اور مرگ حسرت ہائے ہائے 

جب بہار آئے گلستاں میں تو مرجھاتا ہوں میں 

Arzuwo ka shabab aur Marg e harast Haye Haye 

Jab Bahar aye gulistaa mein murjata ho main

حشرؔ میری شعر گوئی ہے فقط فریاد شوق 

اپنا غم دل کی زباں میں دل کو سمجھاتا ہوں میں 

Hashar Meri shair goi hai faqat faryad e shouq

Apna gham Dil ki zaban mein Dil ko samjhta ho main


آغا حشر کاشمیری 


یہ کھلے کھلے سے گیسو انہیں لاکھ تو سنوارے 

مرے ہاتھ سے سنورتے تو کچھ اور بات ہوتی 

Yeh khiley khiley sey gayso enhai lakh tu sawaray

Mere hath sey sawartey toh kuch aur baat hoti

آغا حشر کاشمیری 

یاد میں تیری جہاں کو بھولتا جاتا ہوں میں 

بھولنے والے کبھی تجھ کو بھی یاد آتا ہوں میں

Yaad mein Teri jaha ko bhoolta Jata ho main

Bhoolney waley kabhi tujh ko bhi yaad ata ho main

آغا حشر کاشمیری 

do you know that Agha Hashar Kashmiri was an eminent Urdu poet, playwright, and dramatist who was called the “Shakespeare of Urdu


Post a Comment

0 Comments
* Please Don't Spam Here. All the Comments are Reviewed by Admin.